مقبوضہ بلوچستان: پاکستانی فورسز کی جارحیت کا سلسلہ جاری ہے دو افراد قتل,چاراغوا

0
72

مقبوضہ بلوچستان پاکستانی فورسز کی جارحیت کا سلسلہ جاری ہے دو افراد قتل اور چار افراد کو پاکستانی فورسز نے اغوا کر لیا ہے۔

مقبوضہ بلوچستان کے ضلع پنجگور اور پسنی سے دو افراد کی لاشیں برآمد،کوہلو چار افراد گرفتاری بعد لاپتہ کر دئیے گئے ہیں۔

بلوچستان کے ضلع پنجگور اور پسنی سے دو افراد کی لاشیں ملی ہے۔ جن میں سے ایک شناخت نہیں ہوسکی ہے۔

بلوچستان کے ضلع پنچگور کے علاقے گومازین ڈیم سے ایک لاش برآمد ہوئی ہے۔ لاش کی شناخت اسد اللہ ولد منیر سکنہ تسپ کے نام سے ہوئی ہے۔طلاعات کے مطابق گذشتہ روز اسد منیر اپنے دوستوں کے ہمراہ پکنک منانے کے غرض سے گومازین ڈیم پر گیا تھا اور آج اسکی لاش برآمد ہوئی۔

دریں اثناء بلوچستان کے ساحلی شہر پسنی میں فش ہاربر جیٹی کے احاطے سے ایک شخص کی لاش برآمد ہوئی ہے۔
انتظامیہ کے مطابق نامعلوم لاش کو آر ایچ سی پسنی منتقل کر دیا گیا ہے جبکہ اب تک لاش کی شناخت نہیں ہوسکی ہے۔.تاہم آج برآمد ہونے والی لاشوں کی قتل کے محرکات اب تک سامنے نہیں آئے ہیں۔
لیویز فورسز نے کوہلو کے علاقے تمبو میں چھاپہ مار کر 4 افراد کوگرفتار کرلیا۔ گرفتار ہونے والے افراد کو بعد میں خفیہ اداروں کے تحویل میں دیئے جانے کی اطلاعات ہیں۔

تفصیلات کے مطابق لیویز فورس نے گذشتہ روز بلوچستان کے ضلع کوہلو تحصیل تمبو وزیر ہان شہر میں چھاپہ مار کر شیرانی قبیلے کے 4 افراد جن میں جان میر، شاہ میر، سہراب خان اور افغان شامل ہیں، کو گرفتار کرلیا۔لیویز کے ہاتھوں گرفتار و بعد ازاں لاپتہ ہونے والے افراد کا تعلق ہرنائی سے بتایا جا رہا ہے۔

جواب چھوڑ دیں

براہ مہربانی اپنی رائے درج کریں!
اپنا نام یہاں درج کریں