مقبوضہ کشمیر کے بعد بلوچستان میں بھی پاکستانی فورسز نے بچے کو جنسی زیادتی کا نشانہ بنایا

0
152

مقبوضہ بلوچستان کے ضلع کیچ میں پاکستانی فوج کے اہلکاروں نے ایک کمسن بچے کو جنسی زیادتی کا نشانہ بناکر بے ہوشی کی حالت میں پھینک دیا۔

مقامی ذرائع کے مطابق بدھ کے روز آرمی کے اہلکاروں نے ضلع کیچ کے تحصیل ہوشاب سے 10 سالہ بچے کو جنسی زیادتی کا نشانہ بنایا جس کے باعث اس کی حالت غیر ہوگئی، بچے کو بے ہوشی کی حالت میں تربت اسپتال منتقل کیا گیا۔بچے کی شناخت مراد امیر کے نام سے ہوئی ہے جو ہوشاپ گریڈ بازار کا رہائشی ہے۔ علاقائی ذرائع کے مطابق بچے سے زیادتی کا واقعہ اس وقت پیش آیا جب وہ جنگل کی لکڑیاں لینے گیا تھا۔

مقامی افراد نے واقعے کے خلاف احتجاج کرتے میں ہوشاپ میں شاہراہ کو بلاک کر دیا۔

واضح رہے کہ مقبوضہ بلوچستان میں ایسے واقعات روز کا معمول ہیں جہاں پاکستانی فوج بچوں اور خواتین کو جنسی زیادتی کا نشانہ بناتے ہیں،مگر پاکستانی فوج کی ان جنگی جرائم کا پردہ پاش نہیں ہوتا۔کچھ عرصے قبل پاکستانی زیر قبضہ کشمیر میں بھی ایک بچے کو فوجی اہلکار نے زیادتی کا نشانہ بنایا اور پاکستانی فوج کے اہلکاروں اسے عوام سے چُڑا کر بحفاظت لے گئے

جواب چھوڑ دیں

براہ مہربانی اپنی رائے درج کریں!
اپنا نام یہاں درج کریں