مستونگ سے 3 پروفیسرز فورسز کے ہاتھوں لاپتہ

0
93

بلوچستان یونیورسٹی کے 3پروفیسر زمستونگ سے لاپتہ ہوگئے۔

اطلاعات کے مطابق بلوچستان یونیورسٹی کے تین پروفیسرز ڈاکٹر لیاقت سنی، شبیر شاہوانی اور پروفیسر نظام شاہوانی پراسرار طور پر لاپتہ ہوگئے۔

پروفیسرز کی گاڑی مستونگ کے نواحی علاقہ غلام پڑینز سے برآمد ہوئی ہے۔

پولیس ذرائع کے مطابق تینوں پروفیسرز بی اے کے جاری امتحات کے وزٹ کیلئے کوئٹہ سے خضدار جارہے تھے۔ انتظامیہ مزید تحقیقات کررہی ہیں۔

پولیس کے مطابق لاپتہ پروفیسرز میں سے دو کانک کے علاقے سے منظر عام پر آگئے۔ جبکہ ایک پروفیسر ڈاکٹر لیاقت سنی تاحال لاپتہ ہے۔

بازیاب ہونے والے پروفیسرز نے تاحال کچھ نہیں بتایا ہے، تاہم ماضی میں طلباءاور اساتذہ کے جبری گمشدگیوں کے واقعات بلوچستان میں پیش آچکے ہیں جبکہ کئی واقعات میں پاکستانی فورسز اور خفیہ اداروں کو موردالزام ٹہرایا گیا ہے۔

لیاقت سنی بلوچستان یونیورسٹی میں براہوئی ڈیپارٹنمنٹ کے چیئرمین ہے جبکہ وہ براہوئی زبان پر تحقیق کے حوالے سے جانے جاتے ہیں علاوہ ازیں وہ راہشون ادبی دیوان کے بانیوں میں شمار ہوتے ہےں۔ جبکہ انہوں نے براہوئی میں براہوئی جدیدی شاعری پر پی ایچ ڈی کی ہوئی ہے۔اور ان کی شاعری کا مجموعہ چکار بھی منظر عام پر آچکا ہے۔

جواب چھوڑ دیں

براہ مہربانی اپنی رائے درج کریں!
اپنا نام یہاں درج کریں