پاکستانی فوج کے جنرل کا بلوچ تحریک آزادی کو کچلنے کیلئے چین کی معاونت کا اعتراف

0
394

خصوصی رپورٹ

پاکستانی فوج کے ایک میجر جنرل کا بلوچستان میں اپنی تعیناتی میں چین کے کردار اور معاو نت کا اعتراف، بلوچ تحریک کو کچلنے کے لیے چین نے مجھے یہاں تعینات کرایا اور چھ مہینے کا ٹاسک دیا ہے۔

ایف اے ٹی ایف کا خطرہ ٹل جائے تو ایران کے اندر جاکر کارروائی کریں گے، ایران پاکستان کا سب سے بڑا دشمن ہے جن کا بلوچستان کی بد امنی میں براہ راست ہاتھ شامل ہے۔
گوادر میں باڑلگانا بد امنی روکنے کا واحد آپشن تھا کیوں کہ ہمارے تمام سیکیورٹی آپشنز گوادر کی حفاظت میں ناکام ہوگئے تھے۔

یہ باتیں ایف سی ساؤتھ بلوچستان کے نئے آئی جی میجر جنرل ایمن بلال نے ایف سی ہیڈکوارٹر تربت میں ایف سی اور خفیہ اداروں کے مقامی سورسز سمیت مخصوص شخصیات کے ساتھ ایک خصوصی جرگہ نشست میں کہی تھیں۔

ضلع کیچ میں تعینات پاکستان فوج کے میجر جنرل ایمن بلال نے اپنی تعیناتی و معاونت اور دیگر اہم معاملات میں چین کے کردار کاکھل کر اعتراف کیا ہے۔

ایف سی کے اس خصوصی جرگہ نشست میں پاکستان کے وفاقی وزیر دفاعی پیداوار زبیدہ جلال کی بہن رحیمہ جلال، پیدارک سے ریاستی تشکیل کردہ ڈیتھ اسکواڈ کے سربراہ سردار عزیز، ریاستی ڈیتھ اسکواڈ نگور دشت کے سربراہ یاسر بہرام، حاصل کولوائی اور تمپ، مند، بلیدہ، زامران، دشت اور ہوشاپ سے ریاستی پیرول پر کام کرنے والے مسلح جتھوں کے سربراہان شریک تھے۔

میجر جنرل ایمن بلال نے جرگہ میں اس بات کا اعتراف کرتے ہوئے باعث فکر سے کہا ہے کہ اسے چین نے بلوچستان میں ان کی 30 سالہ سروسز کے تجربات کی بنیاد پر بھاری تنخواہ پر تعینات کیا ہے اور ان کے پاس محض چھ مہینے کا ٹاسک ہے کہ بلوچ قومی جنگ کو کچل دیں۔

انہوں نے کہا کہ وہ گزشتہ تیس سالوں سے بلوچستان میں کام کا وسیع تجربہ رکھتے ہیں اور کوئٹہ، سبی، کولواہ، ڈیرہ بگٹی اور آواران میں کام کرچکے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ چین نے علاقائی مفادات اور ایران کی سی پیک کے خلاف سازشیں روکنے کے لئے مجھے تنخواہ اور بھاری رقم دے کر یہاں خصوصی طور پر آفیشلی تعینات کرایا ہے گویا یہ علاقائی مفادات کے لئے ایک طرح کی سرمایہ کاری ہے۔

میجر جنرل ایمن بلال کا کہنا تھا کہ بلوچ تحریک کے خاتمے اور سی پیک کی کامیابی پاکستان اور چین کے نزدیک بے حد اہم ہیں اس کام کے لیے ہمارے پاس بہت زیادہ پیسہ ہے جس کو جتنی ضرورت ہے وہ بتادیں کیوں کہ اب مزید انتظار نہیں کرسکتے کہ ایران بلوچستان میں بدامنی کرائے، سی پیک کے خلاف سازش کرے اور دوستی کے نام پر ہمارے پیٹ میں خنجر گھونپ دے۔

ایف سی ساؤتھ بلوچستان کے نئے آئی جی میجر جنرل ایمن بلال نے مزید کہا کہ ایران پاکستان کا موجودہ سب سے بڑا دشمن ہے، ایف اے ٹی ایف کا خطرہ آج ٹل جائے کل ہم ایران کے اندر جاکر بلوچ علیحدگی پسندوں کوایساسبق سکھائیں گے کہ ان کی نسلیں تک یاد رکھیں گی۔

لیکن فی الوقت ہمارے پاس 25 کلومیٹر ایرانی سرحد کے اندر جاکر کارروائی کرنے کا آپشن ہے اور اس آپشن کو وقت پر استعمال بھی کریں گے۔

ان کا کہنا تھا کہ گوادر میں فنسنگ سیاسی مسئلہ نہیں اور نا کوئی نیا تجربہ ہے۔ دنیا اور پاکستان نے پہلے بھی شہروں کی حفاظت کے لئے باڈلگائے یا دیواریں بنائیں جہاں سیکیورٹی کا مسئلہ دسترس سے باہر ہو وہاں ایسا کرنا ضرورت بن جاتی ہے۔ گوادر میں بھی حالات ہمارے کنٹرول سے باہر تھے جس کا سیکیورٹی کے تمام آپشنز کی ناکامی کے بعد فیصلہ کیا گیا۔ یہ فنسنگ ہر حال میں ہوگی اسے سیاسی مسئلہ نہیں بننے دیں گے۔

میجر کا جرگہ شرکاء کی طرف سے ڈیزل کی تجارت کے حوالے سے اٹھائے گئے سوالات پر یہ واضح کہنا تھا کہ ایران کے ساتھ ڈیزل کی غیرقانونی ترسیل ہرحال میں بند کریں گے یہ کوئی کاروبار یا تجارت نہیں اس کے پیچھے ایران براہ راست ہمیں نقصان پہنچا رہا ہے۔ ہم نے درجنوں گاڑیاں پکڑیں جن پر اسلحہ اور گولا بارود تھا۔

انہوں نے کہا کہ ڈیزل کی تجارت کو آہستہ آہستہ مکمل ختم کردیں گے، لوگ اپنی متبادل روزگار کا ابھی سے بندوبست کریں، ایرانی تیل کی اسمگلنگ کے بجائے زراعت، زمینداری یا کسی اور شعبے کی طرف جائیں۔

بشکریہ
ادارہ سنگر

جواب چھوڑ دیں

براہ مہربانی اپنی رائے درج کریں!
اپنا نام یہاں درج کریں