جرمنی میں جبری گمشدگیوں کے خلاف احتجاجی مظاہرہ کیاگیا۔ بی این ایم

0
145


بلوچ نیشنل موومنٹ کے ترجمان نے کہاکہ پاکستانی بربریت وبلوچ نسل کشی کے خلاف جاری بین الاقوامی سطح پرآگاہی مہم کے سلسلے میں جبری گمشدگیوں کے خلاف جرمنی کے صوبہ ساکسن  کے شہر کیمنٹس میں ایک احتجاجی مظاہرہ کیا گیا جس میں صوبے کے مختلف علاقوں سے آنے والے بلوچوں نے شرکت کی۔ شرکا نے بلوچستان میں پاکستانی فوج اور خفیہ ایجنسیوں کی طرف ہونے والے مظالم اور بر بریت کے خلاف نعرے لگایا اوربلوچستان میں ہونے والے ظلم و بر بریت اورجبری لاپتہ افراد کے بارے میں مقامی لوگوں میں پمفلٹ تقسیم کیے۔
شرکاء نے اپنے مظاہرے سے خطاب کرتے ہوئے کہاکہ اقوام متحدہ، یورپی یونین اور دیگر انسانی حقوق کی تنظیموں سے اپیل کی وہ بلوچستان میں پاکستانی مظالم کے خلاف آواز بلند کریں اورپاکستانی فوج کے ہاتھوں جبری گمشدہ بلوچوں کی منظر عام پر لانے کیلئے پاکستان پر دباؤ ڈالیں۔


آخر میں جرمنی زون کے وائس پریزیڈنٹ دوستین نے سے خطاب کرتے ہوئے کہاکہ بلوچستان میں 70 سال سے پاکستانی فوج کی ظلم و بر بریت بدستور جاری ہے، وہاں کوئی دن ایسا نہیں گرزتا کہ کوئی اسٹوڈنٹس، ٹیچر، دانشور اور مختلف طبقہ ہائے فکر سے تعلق رکھنے والے لوگ جبری لاپتہ یا شہید نہیں کئے جاتے ہوں۔انہوں نے شرکاء کا شکریہ ادا کرتے ہوئے اس عزم کا اظہار کیا کہ بلوچستان کی آوازدنیا تک پہنچانے کے لیے ہمارا جد و جہد جاری رہے گا۔

جواب چھوڑ دیں

براہ مہربانی اپنی رائے درج کریں!
اپنا نام یہاں درج کریں